پاکستانی سیکس سٹوریز ٹیچر کی بیٹی چودی(pakistani sex stories teacher ke beti chodi)

استاد / طالب علم دیسیبھائی / بہنبہترین سیکس کہانیاںبے وفائی /چیٹنگپاکستانی سکسپرانی یادیں چدائی کیپہلی دفعہ کا سیکسپیگامتکلیف دہ سکسٹھرک مٹانے کے لیئے سکسجنونی سکسخطرنک ڈرائونی سکسخود کے ساتھ سکسخونی رشتوں کے ساتھ سکسدفتر میں سیکسدیسی سیکسرومانسسائبر سکسسفر کے دوران سیکسفلمی گلوکاروں کا سکسکالج میں سیکسکنواریگروپ سکسلسبین/ لڑکی بازلونڈے بازمٹھ پینا

pakistani sex stories jab apnae teacher ki javan sexy beti ko mast choda

پاکستانی  سیکس سٹوریز میں  ٹیچر کی بیٹی کی پھدی ماری کیسے لیکر آیا ہوں اپنے دوستوں کے لیئے جن کو چدائی کہانیاں خاص طور پہ پاکستانی سیکس سٹوریز زیادہ پسند ہوتی ہیں

  یوں تو مٰں ٹیچر کی بھی ھدی مار چکا تھا لیکن وہ دوسری ٹیچر تھی اب وہ تبادلہ کرا کے سرگودھا  جا چکی تھی جب کہ میں ابھی تک پنڈی میں ہی  ہوتا تھا ایک بات بتاتا چلو

Advertisements

جو کہ ہماری راول پنڈی شہر بارے مشہور   ہے کہ یہاں  کی لڑکی  او ر موسم کا اعتبار نہٰں ہوتا ا سلیئے میں پنڈی شہر کی لڑکیوں کو چودتا ہوں ان پہ اعتبار نہیں کرتا

یہ فیملی جس کا میں ذکر کرنے جا رہا ہوں دوسرے شہر سے ادھر شفٹ ہوئی تھی اور لڑکی کی ماں ٹیچر تھی مٰں دو تین بار فیل ہو چکا تھا عمر بالغوں والی بلکہ بیس سال کو پہنچے والا تھا

لیکن تھا میٹرک میں ہی سلم سمارٹ ہونے کی بنا پہ کم عمر لگتا تھااور اب میرے والدین نے مجھے میتھ کی بہت اچھی ٹیچر کاتوں کے پاس پڑھنے کے لیئے پابند کیا ہوا تھا

Advertisements

وہ میتھ کی مشہور خاتون ٹیچر تھی ہم ا سکو ڈبل فیس دیکر راضی کر چکے تھے ٹیچر کی بیٹی کی دیسی کہانیاب میں آپ کی خدمت میں  پیش کرونگا وہاں آگے چل کے معلوم ہو گا کیسے اس کی بیٹی کی پھدی مار کیا شاندار مزہ ملا تھا

میرا نام نفیس ہے میں  دس جماعت کا طالب علم ہوں  یہ بات بتاتے ہوئے اگرچہ شرم آ رہی ہے پر کیا کروں میرے بس میں نہیں ہے پاس ہونا کوشش کرتا ہوں اور بدقسمتی ہے

کہ امتحانات کے عین دنوں میں کئی جانب سے نئی لڑکیوں کی چدائی آفر ملنا شروع ہو جاتی ہے پھدیوں میں اتنا مگن ہو جاتا ہوں کہ پیپرز کی تیاری نہیں کر پاتا تو  فیل ہو جاتا ہوں

Advertisements

اب بھی امتحانات قریب تھے اور مجھے اب ٹیچر کی بیٹی دوست مل چکی تھی ابھی ہم کھل رہے تھے کہ اچانک مجھے ا سکو چودنے کا موقع مل گیا

میں اپنی ایک ٹیچر کے پاسس پڑھنے جاتا تھا  کیوں کے مجھے انکی بیٹی بہت پسند تھی اس لئے میں وہاں بچپن سے پڑھ رہا تھا  انکی بیٹی مجھسے ٢ سال چوٹی مطلب اٹھارہ سال کی تھی

میں ہر وقت اس کے پیچھے پڑا ہوتا تھا  لیکن وہ نہیں سمجھتی تھی کچھ کے میں اسے پسند کرتا ہوں اس طرح مجھے کبھی موقع بھی نہیں ملا اس سے کچھ کہنے کا  کیوں کے میں جب بھی پڑھنے جاتا تھا اس دیسی کہانی والی کی ماں مطلب میری ٹیچر میرے ساتھہ بیٹھ جاتی تھیں  اور مجھے پڑھاتی رہتی تھیں

میں نے بہت بار موقع تلاش کیا  لیکن کبھی نہیں ملا  ایک دفعہ مجھے میری ٹیچر نے کہا کہ کل چھٹی ہے   اور کہا کے کل مت آنا  مجھے باہر جانا ہے کچھ کام وام ہیں میں خوش تو ہوا

Advertisements

لیکن ا سکی بیٹی کو روز دیکھنے کا عادی ہوگیا تھا اداس بھی ہو گیا پھر اپنی بیٹی سے کہنے لگی کے میں کل جاؤنگی تم گھر میں رہنا  اور کام کرنا  میں نے سب کچھ سن لیا تھا

 کے کل یہ گھر میں اکیلی ہوگی  اس سے اچھا مجھے موقع نہیں مل سکتا  میں چپ چاپ وہاں سے چلا گیا  پھر گھر جا کے پلاننگ بنانے لگا کل کی پوری رات مجھے نیند نہیں ای  پوری رات میں سوچتا رہا  پھر دوسرے دن میں سہہ پہر کو ا سکے گھر پہنچ گیا .

. گھر میں کوئی نہیں تھا وہ مجھے کہنے لگی کے تم کیوں آئے ہو جناب کی تو چھٹی تھی اور میری جانب نگاہے ملائے بنا مسکرانے لگی مطلب وہ سمجھ چکی تھی

Advertisements

اور اب ا سکو شرم آ رہی تھی ہائے ا سکا شرمانااور میرا لن کا آپے سے ابہر ہو جانا کتنی تال میل تھی دونوں میں اور تم پھر آج کیوں آئے ہو کیا کوئی مشق کرنی ہے میں نے کہا

جی نہٰں مجھے آج تم سے سبق لینا ہے وہ بھی نئے موضوع پہ بولی کس موضوع پہ میں نے کہا سیکس کے موضوع پہ وہ بولی اوئی مر جاواں آپ بے حیا ہو گئے ہیں

میں نے کہا میں دیسی کہانی والی کو کہا تم سے ملنے آیا ہوں وہ مجھے دیکھنے لگی . اور کہنے لگی کے اندر آجاؤ  میں اندر آگیا اور اس کے ماں باپ کے بیڈ روم میں جا کے لیٹ گیا

Advertisements

پھر وہ بھی آگہی میں نے اسکا ہاتھہ پکڑ کے اسے اپنے پاسس بیٹھا لیا  اور اس سے باتیں کرنے لگا اور اسکو بتانے لگا کے میں تم  کتنا پسند کرتا ہوں  وہ شرمانے لگی

اور شرم کی وجہ سے میرے سے گلے لگ گئی ہم دونوں ایک دوسرے کو اکیلا پا کر خود پے کنٹرول نہیں کر پاے  میں نے اسکو بیڈ پر چودنے کے لیئے لٹا دیا

اور خود بھی اس کے اوپر لیٹ گیا  اور اسکو چکنی جوانی کی مست کسسنگ کرنا ایک دم سے زبردست شروع کیا تھا  میں اس کے لیپس چومنے لگا اور خوب چوسنے لگا

Advertisements

پھر میں نے اس کے جسم سے کپڑے اتار دے  اور اس دیسی کہانی والی لڑکی کے بڑے نوکیلے والے ممے دبانے لگا اور اس کے نوکیلے بڑے نوکیلے والے ممے منہ میں لے کر خوب چوسنے لگ

اپھر میں نے اس کے چکنی جوانی کا جسم میں کسسنگ کی  ہم دونوں بہت سکس کے نشے میں مست ہو رہے تہے  میں اسکی لیگز کھول کر اپنی ہاتھ کی فنگر اس دیسی کہانی والی لڑکی کی چکنی مست پھدی میں دینے لگا

Advertisements

اسکو بہت درد چدنے میں ہو رہا تھا  میں نے ہاتھ کی فنگر پھر اسکو باہر نکال لی اور اسکی چوت سہلانے لگا  پھر اپنا جوانی کا لمبا لنڈ نکال کر اسکی چکنی مست پھدی میں ڈالنے لگا

میں نے اپنا جوانی کا لمبا لنڈ اسکی چکنی مست پھدی میں ڈال دیا پھر کچھ دیرچدائی کے بعد ہم دونوں فارغ ہو گئے  پھر یہ مجھے کہنے لگی کے ممما آنے والی ہیں اب گھر چلے جاؤ

 میں پھر اسکو تھوڑی اور مست سی کسسنگ کر کے گھر آگیا مجھے اپنی ٹیچر کی جوان بیٹی کے  ساتھ دیسی کہانی والی لڑکی کا سیکس کر کے بہت مزہ آیا

Advertisements

اور میں قریب دو ماہ تک مزید پڑھتا رہا ا سکی ماں سے میتھ اور بیٹی سے سیکس کلاسسز ہماری تو پاکستانی سیکس سٹوریز ایسی ہی ہوتی ہیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.